میں دوستیاں نبھانے والا شخص ہوں،چوہدری نثار علی خان

0

کلر سیداں(راجہ سعید) مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما و سابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ میں دوستیاں نبھانے والا شخص ہوں،کلر سیداں کے لوگوں سے ووٹ کا نہیں احساس کا رشتہ ہے جو کبھی ختم نہیں ہو سکتا۔میں جہاں بھی جاتا ہوں کلر سیداں کے عوام کی مثالیں دیتا ہوں،حلقہ بندیوں کے باوجود میرا کلر سیداں کی عوام سے پہلے سے بھی زیادہ مضبوط رشتہ ہو گا اور ماضی کی طرح آئندہ بھی تعلق داری نبھاتا رہونگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کلر سیداں کے نواحی مہیرہ سنگال میں مسلم لیگ (ن) کے درینہ کارکن اور ممبر ایم سی کلر سیداں خلیق احمد راجہ کے انتقال پر ان کے بھائیوں سرفرار راجہ اور عتیق راجہ سے اظہار تعزیت و فاتحہ خوانی کرنے کے بعد وہاں موجود لیگی کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ میری منشا کے مطابق اگر حلقہ بندیاں نہ کی گئیں تو وہ الیکشن کمیشن کیخلاف اپیل میں جائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ میری خواہش ہے کہ کلر سیداں کی غیور عوام میرے حلقہ میں ہی رہے۔میں جذباتی آدمی ہوں ،زندگی کا نچوڑ عہدے نہیں عزت ہے جس کیلئے میں کچھ بھی کر سکتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار حلقہ بندیوں میں تبدیلی الیکشن کمیشن کر رہا ہے جبکہ اس سے قبل انتظامی سطح پر حلقہ بندیوں میں تبدیلی کی جاتی رہی۔انہوں نے کہا کہ نئی مردم شماری کے نتیجے میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے حلقہ میں چھ لاکھ،ایم این اے راجہ جاوید اخلاص کے حلقہ میں چھ لاکھ اور کچھ،عمران خان کے حلقہ میں پانچ لاکھ اور کچھ،شیخ رشید احمد کے حلقہ میں چھ لاکھ اور کچھ کی تبدیلی متوقع ہے جبکہ ایم این اے ملک ابرار کا واحد حلقہ ہے جہاں سات لاکھ کی تبدیلی ممکن ہو سکتی ہے۔ حلقہ این اے 52 میں 11 لاکھ 85 ہزار کی آبادی ہے،میرے دوسرے حلقہ این اے 53 میں پونے دولاکھ آبادی کا آضافہ ہوا ہے۔شاہد خاقان عباسی کا ساڑھے سات یا پونے 8 لاکھ آبادی کا حلقہ بنتا ہے،گوجر خان کو ایک لاکھ پر مشتمل آبادی منتقل ہو سکتی ہے جبکہ شیخ رشید اور عمران خان کو دو دو لاکھ کی آبادی مزید ملے گی،انہوں نے کہا کہ اگر آبادی میں کمی بیشی ہوئی بھی تو میرے حلقہ سے ہی ہو گی۔انہوں نے کہا کہ مجوزہ حلقہ بندیوں سے مجھے بھی تکلیف اور تشویش ہے،میری خواہش تھی کہ تحصیل کلر سیداں کی دیگر یونین کونسلیں جو مری کہوٹہ کیساتھ منسلک ہیں میرے حلقہ میں شامل ہو جاتیں مگر ایسا ہوتا دیکھائی نہیں دے رہا ۔انہوں نے کہا کہ خلیق احمد راجہ مسلم لیگ (ن) کے دست و بازوں تھے اور ان کے انتقال پر مسلم لیگ (ن) اپنے ایک مخلص دوست سے محروم ہو گئی ہے ۔چوہدری نثار علی خان نے خلیق احمد راجہ مرحوم کی دو معصوم بیٹیوں سے پیار بھی کیا،بعد ازاں وہ مسلم لیگ (ن) کے رہنما حاجی محمد ریاست کی رہائش گاہ پر گئے جہاں انہوں نے نماز ظہر ادا کی اور چائے پینے کے دوران غیر رسمی گفتگو کی جس کے بعد وہ اسلام آباد روانہ ہو گئے۔رکن پنجاب اسمبلی انجینئر قمر السلام راجہ،سابق رکن پنجاب اسمبلی محمود شوکت بھٹی،چےئرمین ایم سی کلر سیداں شیخ عبدالقدوس،لیگی رہنما محمد ظریف راجا، چےئرمین حضرات، بلدیہ کونسلرز اور لیگی ارکان کی کثیر تعداد اس موقع پر موجود تھی ۔

Share.

Comments are closed.