حلقہ تخلیق ادب ٹیکسلا کا ہفتہ وار اجلاس بدھ 6 دسمبر کو ایچ ایم سی بوائز ہائی سکول ٹیکسلا میں منعقد ہوا

0

ٹیکسلا(ڈاکٹر سید صابر علی ،بیوروچیفِ پوٹھوار لنک ڈاٹ کام )حلقہ تخلیق ادب ٹیکسلا کا ہفتہ وار اجلاس بدھ 6 دسمبر کو ایچ ایم سی بوائز ہائی سکول ٹیکسلا میں منعقد ہوا. اجلاس سے پہلے مجلس عاملہ کی میٹنگ ہوئی جس میں حلقہ کے خبرنامہ کاوش کے اجراء اور سالانہ مشاعرہ کے حوالے سے امور طے کیے گئے. اجلاس کا دوسرا دور ربیع الاول کی مناسبت سے نعتیہ مشاعرے پر مشتمل تھا جس کی صدارت حسن علی طاہر نے کی جبکہ نظامت کے فرائض حلقے کے معتمد عمومی فیصل ساغر نے ادا کیے. دیگر شرکاء4 میں مظہر حسین سید، اسامہ جمیل، صدام فدا، خرم جون، ظفری پاشا، حفیظ اللہ بادل، شکیل شاکی اور تصور حسین تصور شامل تھے. ،فیصل ساغر نے کلام میں نے بھی سبت کے قانون کو توڑا لیکن ،اس نے بھی اک نام کے صدقے مجھے آدم رکھا ، صدام فدا نے کلام ان کی آمد سے ہوا دشت گلستاں کی طرح ،ان کے صدقے در و دیوار سے خوشبو آئی ،خرم جون نے کلا م سوچ لوں نام مصطفیٰ تو پھر،جو بھی لکھا ہو نعت ہو جائے ،شکیل شاکی نے کلام،دل بھی کہتا ہے کہیں دور نکل جاؤں میں ،اک آواز بھی آتی ہے مدینے سے مجھے،تصورحسین تصور نے کلام،مدینے کی گلی میں جب چلوں گا ،میں ذرہ ہوں ستارہ پر بنوں گا ،حفیظ اللہ بادل نے کلام،کارعشاق میں ہے پہلا قرینہ سینہ،بنتا جاتا ہے شب و روز مدینہ سینہ،ظفری پاشانے کلام،مرے واسطے بھی دعا واں پے کرنا ،جو تم میں سے کوئی بھی جائے مدینہ پیش کیا جبکہ مظہر حسین سید نے “نوٹوں کی بارش میں نعت” کے عنوان سے نظم سنا کر داد سمیٹی.،صدرِ محفل حسن علی طاہر کی نعتیہ نظم سے انتخاب ،تو میرے ضمیر کا نور ہے ،میری عقل و فکر و شعور ہے،تیری نعت میرا سرور ہے تیرا ذکر میرا غرور ہے ،خیر الورا شہہ دو سرا،تیرا آسرا در مصطفیٰ ،تو زمیں زمیں تو فلک فلک ،تو خدا کے تخت عروج تک ،تیرے نام پہ میری جاں فدا ،تیرا آسرا در مصطفیٰ ،تو کلام حق کا امین ہے ،مرا علم و وجہ یقین ہے ،راہ دار حشر کے راہنما ،تیرا آسرا در مصطفٰی.

Share.

Comments are closed.

error: