چوہدری محمد اخلاق کو اداب سیکھانے والے اپنا قد کاٹھ دیکھ کر تجزیہ نگار بنے

0

سہرمنڈی(محمد فیصل )پاکستان تحریک انصاف کے رہنما نوجوان قانون دان حسنین علی چوہدری ،واحد عزیز چوہدری اور اسد ارشدنے کہا کہ چوہدری محمد اخلاق کو اداب سیکھانے والے اپنا قد کاٹھ دیکھ کر تجزیہ نگار بنے چوہدری محمد اخلاق نے عوامی نمائندگی کا حق ادا کیا ہے اخلاقیات کا درس دینے والوں کو اچھائی اور برائی میں فرق سیکھنے کی ضرورت ہے عوامی منصوبوں پر سیاست کرنے والے لیڈر کے چمچے حلقہ کی غریب اور مجبور عوام کی خدمت پر اپنی توانیاں صرف کریں بے جا اور بے بنیاد ایشو پر بیان بازی سے عوام کی توجہ اصل سے ہٹانے کی کاوشیں رائیگاں جائے گی کیونکہ حلقہ کی عوام کو سبز باغ دیکھانے والوں کی پہچان آچکی ہے اور سستی شہرت کے خوہشمند باادب خودساختہ لیڈر فضول کی بھڑکیں مار کر عوام کو احمق نہیں بنا سکتے عوامی منصوبوں اور میگا پروجیکٹ کی رٹ لگانے والے دل کو تسلیاں دینا بند کر دے عوام کھوٹے اور کھرے کی پہچان اب خوب کرتے ہیں کیونکہ موجودہ عوامی فلاحی منصوبوں سے عوام اب یہ جان چکی ہے کہ انکو ہماری نہیں کمیشن کی فکر ہے اگر اس میں رائی برابر بھی شک ہو تو گلپور سہنسہ سرساوہ روڈ کا حشر ملاحظہ کریں عوام کو پاگل بنانے کے لیے کام رکوایا گیا لیکن آج بھی وہی حشر ہے جو پہلے تھااگر عوام کے ساتھ اتنا ہی پیار ہے تو بھڑکیں مارنے کے سلسلے کو بند کر کہ میدان عمل میں اترے صرف ذاتی جمع خرچ سے مجبور اور سادہ لوح عوام کی مشکلات کم نہیں ہوسکتی حقیقت یہی ہے کہ سیاسی چمچوں نے صرف ایڈجسٹمنٹ اوراپنی ترقی کے لیے اپنے ایم ایل اے کی تعریفوں کے پل باندھے ہیں حلقہ کی عوام آج بھی ایک بنیادی سہولتوں سے محروم ہے عوام کے نمائندگی کی بات کرنے والے بتائے کہ آپ کے دور میں کونسا ایسا کارنامہ ہے جس سے غریب کا بھلا ہوا ہو یہاں تک کے عوام صاف پانی سے بھی محروم ہے ہوا میں تیر چلانے والے اپنی فکر کریں انشااللہ ہم اخلاقیات کو اچھی طرح جانتے ہیں۔

 

Share.

Comments are closed.

error: