ملکی آئین کو بازیچہ اطفال بنایا جا رہا ہے,سراج الحق

0

کلر سیداں(راجہ سعید)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملکی آئین کو بازیچہ اطفال بنایا جا رہا ہے ،ایک شخص کیلئے قانون میں تبدیلی آئین کیساتھ کھلا مذاق ہے ،آئین ملک و قوم کیلئے بنایا جاتا ہے کسی فرد واحد کیلئے نہیں،مجرموں کو تحفظ دینے کیلئے آئینی ترامیم کی جا رہی ہیں ،ریاستی اداروں کیساتھ ٹکراؤ سے ملک میں افراتفری پھیلے گی۔جب تک کرپٹ عناصر کو گرفتار کر کے ان سے لوٹا گیا پیسہ واپس نہیں ہو گا اس وقت تک ملک میں خوشحالی نہیں آ سکتی۔قرضوں کی اقساط واپس کرنے کیلئے مہنگائی آسمانوں کو چھو رہی ہے،بجلی اور پٹرول کی قیمتیں بڑھادی گئی ہیں جس سے غریب عوام مہنگائی کے ہاتھوں پس کر رہ گئے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی کے ضلعی رہنما اور این اے 52 کے متوقع امیدوار خالد محمود مرزا کی رہائش گاہ پر ان کے مقتول بھائی کمانڈر طالب حسین کی وفات پرفاتحہ خوانی کے بعد پارٹی کارکنو ں سے گفتگو کے دوران کیا۔ضلعی امیر شمس الرحمان سواتی،امیر جماعت اسلامی کے رابطہ سیکرٹری عطا الرحمان،حلقہ پی پی 5 سے متوقع صوبائی امیدوار راجہ عرفان بھٹی،مقتول کے بھائی طارق مرزا اورجماعت اسلامی کے رہنما چوہدری محمد ضمیر بھی اس موقع پر موجود تھے ۔سینیٹر سراج الحق نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اداروں سے ٹکراؤ کی پالیسی ملکی استحکام کیلئے خطرہ ہے ،عدلیہ اور پارلیمنٹ کو آمنے سامنے لانے والے ہوش کے ناخن لیں ۔ ملکی سلامتی کیلئے جانیں قربان کرنے والی فوج پر الزام تراشیاں قومی مفاد میں نہیں،تحفظ ختم نبوت پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا ۔انہوں نے کہا کہ حلف نامہ کی تبدیلی میں حالیہ سازشوں کا مقصد بیرون آقاؤں کو خوش کرنا تھا۔ حکومت کی طرف سے انتخابی اصلاحات کے بل میں ختم نبوت کے حلف کے حوالے سے کی جانے والی ترمیم کو واپس لینے کا اعلان عوام کی بڑی کامیابی ہے۔اگر حکومت یہ ترمیم واپس نہ لیتی تو ہم اس کیخلاف عدالت چلے جاتے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے قادیانیوں کو مسلمانوں کی صف میں شامل کرنے کی جو سازش کی تھی اسے قوم اور میڈیا کی بیداری کی وجہ سے حکومتی سازش پر پانی پھر گیا۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ نااہل شخص کو پارٹی سربراہ بنانے کی ترمیم بھی فوری طور پر واپس لے وگرنہ جماعت اسلامی قانونی راستہ اختیار کرے گی،حکومت غیر آئینی ہتھکنڈے استعمال کرنے سے باز رہے۔انہوں نے کہا کہ کرپشن کے خاتمہ کیلئے ضروری ہے کہ پانامہ لیکس کے دیگر کرداروں کیخلاف بھی کارروائی شروع کی جائے ۔انہوں نے تحفظ عقیدہ ختم نبوت کے حلف نامے میں تبدیلی کرنے والوں کو بے نقاب کرنے اور سخت سزا دینے کا بھی مطالبہ کیا۔

Share.

Comments are closed.

error: